تائیوان کے قریب چین کی فوجی مشقیں، امریکہ کی تحمل کی اپیل

چین نے جمعرات اور جمعہ کو تائیوان کے قریب فوجی مشقیں کیں، حالانکہ امریکہ نے تحمل سے کام لینے پر زور دیا ہے۔

چین کی ایسٹرن تھیٹر کمانڈ نے جمعرات کو تائیوان، کِنمین جزائر اور دیگر علاقوں کے گرد جمعے تک دو روزہ مشقوں کا اعلان کیا تھا۔

کمان کے ترجمان نے جمعہ کو سوشل میڈیا پوسٹ میں کہا کہ جاری مشقوں کا مقصد مختلف فوجی شعبوں کے درمیان ہم آہنگی کی تصدیق کرنا ہے۔

تائیوان کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ جمعہ کی صبح 6 بجے تک کے 24 گھنٹوں کے دوران، اس نے تائیوان کے قریب چینی مسلح افواج کے کُل 49 طیاروں، 19 فوجی بحری جہازوں اور 7 سرکاری جہازوں کی موجودگی کا پتہ لگایا ہے۔

تائیوان کی فضائیہ نے چینی جہازوں کی ویڈیوز اور تصاویر جاری کیں جو جمعرات کو ایک آبدوز شکن گشتی طیارے نے لی تھیں۔ تائیوان بظاہر یہ ثابت کرنے کی کوشش کر رہا ہے کہ چین کی تمام نقل و حرکت پر اسکی نگاہ ہے۔

امریکی وزارت خارجہ کے ایک ترجمان نے جمعرات کو NHK کو بتایا کہ واشنگٹن تائیوان سے ہم آہنگ ہو کر صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے اور بیجنگ پر زور دیتا ہے کہ وہ تحمل سے کام لے۔ ترجمان نے کہا کہ چین کے اقدامات سے کشیدگی میں اضافے اور دہائیوں سے علاقائی امن و استحکام کو برقرار رکھنے والے دیرینہ اصولوں کی پامالی کا خطرہ ہے۔