ابراہیم رئیسی اور دیگر کی آخری رسومات

ایران کے دارالحکومت تہران میں بدھ کے روز ملک کے مرحوم صدر ابراہیم رئیسی اور اتوار کے ہیلی کاپٹر حادثے میں ہلاک ہونے والے دیگر افراد کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی۔ آخری رسومات کا انعقاد بڑے پیمانے پر کیا گیا۔

ہیلی کاپٹر ایران کے شمال مغربی صوبے مشرقی آذربائیجان میں گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ صدر رئیسی اور وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان سمیت اس میں سوار تمام آٹھ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

نماز جنازہ میں شام اور عراق کے وزرائے اعظم سمیت کئی ہمسایہ ممالک کی معزز شخصیات نے شرکت کی۔

عبوری صدر کا عہدہ سنبھالنے والے ایرانی اوّل نائب صدر محمد مخبر نے شرکاء کا خیر مقدم کیا۔

چینی نائب وزیراعظم ژانگ گوچِنگ اور روسی ایوان زیریں کے چیئرمین ویاچیسلاف ولوڈِن نے آخری رسومات میں شرکت کی۔ مغربی دنیا کا مقابلہ کرنے کے لیے یہ دونوں ممالک ایران کے ساتھ تعلقات کو مضبوط بنا رہے ہیں۔

ایران بظاہر یہ دکھانا چاہتا تھا کہ ملکی صدر اور وزیر خارجہ کی غیر متوقع موت کے باوجود دیگر ممالک کے ساتھ اس کے سفارتی تعلقات برقرار ہیں۔