یورپی قانون سازوں کی اے آئی پر تاریخی قانون سازی

یورپی کونسل نے منگل کو مصنوعی ذہانت، اے آئی، کے ضوابط طے کرنے کے لیے دنیا کے پہلے بڑے قانون کی منظوری دی ہے۔ اس قانون سازی کے نتیجے میں اے آئی کا عالمی معیار مقرر کیا جا سکتا ہے۔

یورپی یونین کے 27 رکن ممالک کا وزراتی اجلاس برسلز میں منعقد ہوا، جس میں "آرٹیفیشل انٹیلی جنس ایکٹ" کے نام سے موسوم ضوابط کی حتمی منظوری دی گئی۔

بیلجیئم کے سیکرٹری آف اسٹیٹ برائے ڈیجیٹلائزیشن میتھیو مشیل نے کہا کہ یورپ نے "محفوظ، انسانی فلاح و بہبود کے لیے وقف اور قابل اعتماد مصنوعی ذہانت کی ترقی کی غرض سے ضوابط بنانے کا فیصلہ کیا ہے"۔

لاحق خطرے کے مطابق نئے ضابطے کی درجہ بندی کی جائے گی۔ اس ضابطے میں ذاتی ڈیٹا کی بنیاد پر قابل اعتبار ہونے کا تعین کرنے یا درجہ بندی کرنے یا یہ فیصلہ کرنے پر پابندی لگائی جائے گی کہ کسی کے جرم کرنے کا کتنا امکان ہے۔ اس ضابطے کے ذریعے عوامی مقامات پر بائیو میٹرک شناخت کے استعمال کو بھی محدود کیا جائے گا۔

نئے قانون کا مقصد شفافیت اور احتساب کو بھی یقینی بنانا ہے۔ نئے ضوابط کے مطابق، موجودہ لوگوں سے مشابہ اے آئی کے ذریعے بنائی گئی تصاویر، ویڈیو اور آڈیو پر لیبل لگانا ہو گا کہ انہیں مصنوعی طور پر تیار کیا گیا ہے۔

نئے ضوابط 2026 سے مرحلہ وار نافذ کرنا شروع کیے جائیں گے۔