جاپان، جنوبی کوریا کا منظم فراڈ سے نمٹنے کے لیے تعاون

جاپان اور جنوبی کوریا کے پولیس سربراہان نے دھوکہ دہی کے منظم واقعات کی بڑھتی ہوئی تعداد سے نمٹنے سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

2010 کے بعد دونوں ممالک کے پولیس سربراہان کی یہ پہلی ملاقات تھی۔

جاپان کی نیشنل پولیس ایجنسی کے کمشنر جنرل تسُویُوکی یاسُوہیرو نے منگل کو ٹوکیو میں اپنے جنوبی کوریائی ہم منصب یُون ہی کیون سے ملاقات کی ہے۔

جناب تسُویُوکی نے کہا کہ دونوں ممالک کو شمالی کوریا، اقتصادی سلامتی اور سرحد پار سے بار بار دھوکہ دہی جیسے مشترکہ مسائل درپیش ہیں۔ انہوں نے باہمی تعاون پر مبنی تعلقات کو مضبوط بنانے کی امید ظاہر کی۔

جناب یُون نے جواب دیتے ہوئے خیال ظاہر کیا کہ انہیں مختلف نقطہ نظر سے باہمی مفادات کے لیے اپنے تعاون پر مبنی تعلقات کو مضبوط کرنا چاہیے۔

دونوں ممالک میں منظم دھوکہ دہی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے پیش نظر، پولیس سربراہان نے نقصانات اور دھوکہ دہی کے طریقوں کے بارے میں معلومات کا اشتراک کرنے کے منصوبوں کی تصدیق کی۔ انہوں نے جنوب مشرقی ایشیا اور دیگر مقامات پر پھیلنے والے مجرمانہ کارروائیوں کے اڈوں کو بے نقاب کرنے کے لیے مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

باور کیا جاتا ہے کہ انہوں نے غلط معلومات پھیلانے کے لیے تخلیقی مصنوعی ذہانت استعمال کر کے بنائی گئی ویڈیوز کے خلاف اقدامات اٹھانے پر بھی تبادلہ خیال کیا ہے۔