ایران میں صدر رئیسی کے انتقال پر سوگ

ایران کے صدر ابراہیم رئیسی سمیت ہیلی سمیت کاپٹر حادثے میں ہلاک ہونے والے دیگر مسافروں کی تعزیتی تقریبات ملک بھر میں منعقد کی گئی ہیں۔

شمال مغربی ایرانی صوبے مشرقی آذربائیجان میں اتوار کے روز گرنے والے ہیلی کاپٹر میں سوار تمام آٹھ افراد ہلاک ہو گئے تھے، جن میں صدر رئیسی اور وزیرِ خارجہ حسین امیر عبداللہیان شامل ہیں۔

حکام مسافروں کی لاشیں نکالنے اور حادثے کی وجہ جاننے کے لیے کام کر رہے ہیں۔ سرکاری ذرائع ابلاغ نے خراب موسم کو وجہ قرار دیا ہے۔

تہران اور ملک کے دیگر حصوں میں پیر کے روز یادگاری دعائیہ تقریبات کے مقامات پر سوگوار بڑی تعداد میں جمع تھے۔

ایران کے اعلیٰ ترین مذہبی رہنماء آیت اللہ علی خامنہ ای نے پانچ روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا ہے۔

حکام نے بتایا کہ فی الحال اوّل نائب صدر محمد مخبر عبوری صدر کے طور پر منصب سنبھالیں گے۔ نئے صدر کے لیے انتخابات 28 جون کو ہوں گے۔

ابھی یہ دیکھنا باقی ہے کہ حکومتی عہدوں میں آنے والی تبدیلیاں مشرقِ وسطیٰ میں اس ملک کی سفارتی پالیسی پر کس طرح اثر انداز ہوں گی۔ ایران، حماس کے عسکریت پسندوں کی حمایت کرتا ہے، جو غزہ میں اسرائیل سے نبردآزما ہیں۔