امریکی قومی سلامتی مشیر کی اسرائیل میں نیتن یاہو سے ملاقات

وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے جنوبی غزہ کے رفح میں فوجی کارروائیوں پر تبادلہ خیال کے لیے اتوار کو اسرائیل میں اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو سے ملاقات کی۔

وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ "دونوں نے شہریوں کو کم سے کم نقصان پہنچاتے ہوئے حماس کی شکست کو یقینی بنانے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا"۔

اطلاعات کے مطابق، سلیوان نے رفح پر صدر جو بائیڈن کے دیرینہ موقف کا اعادہ کیا۔

خیال کیا جاتا ہے کہ انہوں نے رفح میں بڑے پیمانے پر اُس زمینی حملے کی مخالفت کرنے والے امریکی موقف پر ایک بار پھر زور دیا جس سے عام شہریوں کی ہلاکت کا خدشہ ہے۔ انہوں نے بظاہر اسرائیل پر زور دیا کہ وہ صرف حماس کے سینئر ارکان کو نشانہ بنائے۔

اسرائیلی فورسز رفح میں حماس کے خلاف مسلسل حملے کر رہی ہیں جہاں بہت سے لوگ پناہ لیے ہوئے ہیں۔ اسرائیل اپنے حملوں کو تیز کرنے کے لیے علاقے میں اضافی فوج بھیجنے کے لیے تیار ہے۔

بائیڈن نے خبردار کیا ہے کہ اگر اسرائیل رفح میں زمینی کارروائیاں کرتا ہے تو واشنگٹن گولہ بارود اور دیگر ہتھیاروں کی فراہمی روک دے گا۔

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ادارے، UNRWA کا کہنا ہے کہ رفح سے تقریباً 8 لاکھ افراد نقل مکانی پر مجبور ہو چکے ہیں، اور انہیں صاف پانی میسر نہیں ہے۔