جنوری تا مارچ کی سہ ماہی میں جاپان کی جی ڈی پی سکڑ گئی

جاپان کے تازہ ترین جی ڈی پی اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ جنوری تا مارچ کی مدت میں ملکی معیشت سکڑ گئی۔ مسلسل دو سہ ماہیوں میں جاپان میں ایسا پہلی بار ہوا ہے، جس کی وجہ صارفین کی جانب سے اخراجات میں کمی ہے۔

کابینہ کے دفتر نے جمعرات کے روز اس سال کی پہلی سہ ماہی کے ابتدائی اعداد و شمار جاری کیے جن سے ظاہر ہوتا ہے کہ گزشتہ سہ ماہی کے مقابلے میں مذکورہ تین ماہ میں مجموعی ملکی پیداوار یا جی ڈی پی میں سالانہ اعتبار سے 2 فیصد کی خالص کمی ہوئی۔

ذاتی اخراجات، جو جاپان کی جی ڈی پی کا نصف سے زیادہ ہیں، 0.7 فیصد گر گئے۔

جاپان کی گاڑی ساز صنعت میں رکاوٹوں کے باعث مجموعی اعداد و شمار میں کمی ہوئی۔ حکومت کے مقرر کردہ حفاظتی معیارات پر پورا نہ اترنے کے سبب کچھ گاڑی ساز کمپنیوں نے پیداوار اور ترسیل معطل کر دی تھی۔

جاپان کی آٹو انڈسٹری میں رکاوٹوں کے سبب برآمدات میں مجموعی طور پر5 فیصد کمی ہوئی۔