رفح آپریشن ’چند ہفتوں‘ میں مکمل ہو جائے گا: نیتن یاہو

اسرائیل کے وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے جنوبی غزہ شہر میں حماس کی چار بٹالین کو تباہ کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ رفح میں فوجی کارروائی ’’مہینوں نہیں، سالوں نہیں، چند ہفتوں میں‘‘ ختم ہو جائے گی۔

نیتن یاہو نے بدھ کے روز امریکی نیوز چینل سی این بی سی کو انٹرویو دیا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل کے درمیان ’’اختلاف‘‘ ہے۔ لیکن انہوں نے کہا، ’’بعض اوقات، آپ کو صرف وہی کرنا پڑتا ہے جو آپ کی بقا اور اپنے مستقبل کو یقینی بنانے کے لئے ضروری ہے‘‘۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے خبردار کیا ہے کہ اگر اسرائیلی افواج نے رفح میں بڑے پیمانے پر زمینی کارروائی کی، جہاں بڑی تعداد میں عام شہری پناہ لیے ہوئے ہیں، تو واشنگٹن گولہ بارود اور دیگر ہتھیاروں کی فراہمی روک دے گا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان اس ہفتے کے آخر میں اسرائیل کا دورہ کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں تاکہ لڑائی کو روکنے کے لیے کوئی بڑی پیش رفت کی جا سکے۔

اسرائیلی فوج نے بدھ کے روز کہا تھا کہ اس نے ایک روز قبل محصور علاقے میں تقریباً 80 اہداف پر فضائی حملے کیے ہیں۔ فوج نے یہ بھی کہا ہے کہ اس کی زمینی افواج نے رفح اور شمالی شہر جَبالیہ میں حماس کے جنگجوؤں کی ایک بڑی تعداد کو ’’ہلاک‘‘ کیا ہے۔