بائیڈن کا چین سے وابستہ کمپنی کو فضائی اڈّے کے قریب واقع زمین فروخت کرنے کا حکم

امریکی صدر جو بائیڈن نے قومی سلامتی کے خدشات کا حوالہ دیتے ہوئے چین سے وابستہ ایک کاروباری ادارے کو فضائیہ کے اڈّے کے قریب خریدی گئی جائیداد خالی کرنے اور فروخت کرنے کا حکم دیا ہے۔

وہائٹ ہاؤس نے پیر کے روز جاریکردہ ایک بیان میں کہا کہ مذکورہ کاروباری ادارے نے جون 2022ء میں وائیومِنگ میں فرانسس ای وارین فضائیہ اڈّے کے ایک میل کے اندر واقع جائیداد خریدی تھی۔ یہ اڈّا بین البراعظمی بیلسٹک میزائلوں کے امریکی ہتھیاروں کے ایک حصے کا مرکز ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اس کے بعد مذکورہ کاروباری ادارے نے خاص کِرپٹو مائننگ کی کاروائیوں کے لیے اس جائیداد کو استعمال کرنے کے لیے بہتر بنایا۔

مذکورہ بیان میں نشاندہی کی گئی ہے کہ قومی سلامتی کے خطرات کی شناخت امریکہ میں غیرملکی سرمایہ کاری کی کمیٹی نے کی۔

بیان میں بتایا گیا ہے کہ اس کی وجہ غیرملکی ملکیتی جائیداد کا ایک تزویراتی میزائل اڈّے اور امریکہ کی تین جوہری صلاحیتوں کے کلیدی عنصر کے قریب ہونا ہے۔

تین امریکی جوہری صلاحیتوں میں بین البراعظمی بیلسٹک میزائل، آبدوز سے داغے جانے والے بیلسٹک میزائل اور تزویراتی بمبار طیارے شامل ہیں۔