جاپان کا جنوبی کوریا سے قانون ساز کے تاکیشِیما جزائر کے دورے پر احتجاج

جاپان کے چیف کابینہ سیکریٹری ہایاشی یوشِیماسا نے کہا ہے کہ اُنہوں نے جنوبی کوریائی حزبِ اختلاف کے ایک قانون ساز کے پیر کے روز بحیرۂ جاپان میں واقع متنازع تاکیشِیما جزائر کا دورہ کرنے کے بعد سیئول سے سخت احتجاج کیا ہے۔

یہ جزائر جنوبی کوریا کے زیرِ انتظام ہیں۔ جاپان اِن پر ملکیتی دعویٰ رکھتا ہے اور اُس کا مؤقف ہے کہ جنوبی کوریا نے اِن جزائر پر غیرقانونی قبضہ کر رکھا ہے۔

ہایاشی نے منگل کے روز نامہ نگاروں کو بتایا کہ یہ دورہ جاپان کی جانب سے منسوخ کرنے کی پیشگی درخواست کے باوجود کیا گیا۔ اُنہوں نے کہا کہ یہ قطعی طور پر ناقابلِ قبول اور انتہائی افسوسناک ہے، کیونکہ یہ جزائر تاریخی حقائق کی روشنی میں اور بین الاقوامی قانون کی بنیاد پر جاپان کی سرزمین کا موروثی حصہ ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ اُنہوں نے پیر کے روز سفارتی ذرائع کے توسط سے احتجاج کیا اور ایسے واقعات کو دوبارہ رونما ہونے سے روکنے کے لیے اقدامات کا مطالبہ کیا ہے۔