راکٹ لانچر سسٹم کے لیے قابلِ کنٹرول گولوں کا تجربہ کیا گیا: شمالی کوریا کا دعویٰ

شمالی کوریا کا کہنا ہے کہ اس کے رہنما کِم جونگ اُن نے جمعہ کے روز 240 ملی میٹر کے متعدد راکٹ لانچر سسٹم کی بہتر کردہ قسم کے لیے قابل کنٹرول گولوں کی آزمائشی فائرنگ کا معائنہ کیا ہے۔

شمالی کوریا کی حکمران ورکرز پارٹی کے اخبار رودونگ سِنمُون نے ہفتے کے روز اطلاع دی کہ لانچر میں خودکار فائر کمبائنڈ کنٹرول سسٹم ہے۔ اس نے مزید کہا کہ فائر کیے گئے تمام آٹھ گولے اپنے اہداف پر لگے۔

اخبار نے یہ بھی کہا کہ یہ نظام اس سال سے 2026 تک ملکی فوج کے یونٹوں میں نصب کیا جائے گا۔

اطلاعات کے مطابق یہ گولے ایسے نئے قومی دفاعی صنعتی ادارے نے تیار کیے جو ملکی گولہ بارود کی برآمدات کے انچارج سیکنڈ اکانومی کمیشن نے قائم کیا تھا۔

مضمون میں کہا گیا ہے کہ کِم نے قومی دفاعی اقتصادی کام کو مزید تیز کرنے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا اور گولوں کی پیداوار کو بلند ترین سطح تک بڑھانے کا حکم دیا۔

جنوبی کوریا کی وزارت وحدت نے گزشتہ سال کہا تھا کہ "قومی دفاعی اقتصادی کام" کی اصطلاح ہتھیاروں کی برآمدات کا حوالہ ہو سکتی ہے۔

جنوبی کوریا کی یونہاپ نیوز ایجنسی نے مبصرین کے حوالے سے کہا ہے کہ پیونگ یانگ کا مقصد روس کو برآمدات کے ذریعے اقتصادی فوائد حاصل کرنا ہو سکتا ہے، جو یوکرین پر اپنی فوجی جارحیت جاری رکھے ہوئے ہے۔