پوٹن کا ماسکو میں یوم فتح کی تقریب سے خطاب

روسیوں نے نازی جرمنی کے خلاف سابق سوویت یونین کی فتح کی یاد میں دارالحکومت ماسکو میں تقریب منعقد کی ہے۔ ملک بھر میں یوم فتح کی تقریبات کا اہتمام ایسے موقع پر کیا گیا، جب یوکرین پر روسی حملہ جاری ہے۔

روس نے جمعرات کے روز دوسری جنگ عظیم کی فتح کی 79 ویں سالگرہ کے موقع پر 20 سے زیادہ شہروں میں تقریبات اور فوجی پریڈ کا اہتمام کیا۔

ماسکو میں منعقد ہونے والی تقریب کا آغاز ریڈ اسکوائر میں صبح 10 بجے صدر ولادیمیر پوٹن کے خطاب سے ہوا۔

صدر پوٹن نے کہا کہ روس کسی کو بھی اپنے ملک کو دھمکانے کی اجازت نہیں دے گا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ روس کی سٹریٹجک فورسز ہمیشہ جنگ کے لیے تیار رہتی ہیں۔

صدر نے یوکرین کی حمایت کرنے والی مغربی اقوام کو بظاہر قابو میں رکھنے کے لیے اپنے ملک کی فوجی طاقت، بشمول جوہری قوتوں کا حوالہ دیا۔

صدرپوٹن نے اپنی تقریر کا اختتام اس اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کیا کہ روس اور اس کے عوام کے لیے ایک آزاد اور محفوظ مستقبل کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے یوکرین میں فتح کے لیے لوگوں سے متحد رہنے کی اپنی اپیل کو دہرایا۔