جاپانی حریف کمپنیوں کا ڈینگی کے خلاف مشترکہ محاذ

جاپان میں دو حریف کمپنیوں نے جنوب مشرقی ایشیا اور دیگر مقامات پر ڈینگی بخار کے بڑھتے ہوئے پھیلاؤ کا مقابلہ کرنے کی غرض سے مچھر مار اسپرے تیار کرنے کے لیے تعاون کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

کاؤ کارپوریشن نے تکنیکی مہارت اور پراڈکٹ کی تیاری کی مدت کم کرنے کے لیے ارتھ کارپوریشن کے ساتھ اشتراک کیا ہے۔

کمپنیوں کا کہنا ہے کہ اسپرے کے ذریعے مچھروں کے پروں اور جسموں کو تر کرنے کے لیے مہین آبی بخارات استعمال کیے جاتے ہیں تاکہ انہیں اڑنے سے روکا جا سکے۔

اسپرے میں ایک محلول شامل کیا گیا ہے، جو فوری پھیل جاتا ہے اور مچھروں کے جسم میں پانی جذب نہ کرنے کی صلاحیت کم کر دیتا ہے۔

کمپنیوں کا کہنا ہے کہ اسپرے میں کوئی کیمیائی کیڑے مار دوا شامل نہیں کی گئی ہے۔ کمپنیاں جولائی سے تھائی لینڈ میں اسپرے کی فروخت شروع کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں۔

اس منصوبے کے ذریعے کاؤ کی ٹیکنالوجی اور ارتھ کے علم و دانش کو جنوب مشرقی ایشیائی مارکیٹ میں یکجا کیا گیا ہے۔ کمپنیوں کے مطابق، مچھروں کے ذریعے ڈینگی بخار کے پھیلاؤ سے صحت کو لاحق بڑھتے ہوئے خطرات کی وجہ سے انہوں نے اپنی رقابت کو پس پشت ڈال دیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ عالمی سطح پر ڈینگی بخار سے ہونے والے انفیکشنز کی تعداد گزشتہ سال 65 لاکھ سے زائد کی ریکارڈ بلند سطح پر پہنچ چکی ہے۔