بینک آف جاپان کے سربراہ کا وزیراعظم سے کمزور ین پر تبادلہ خیال

بینک آف جاپان کے گورنر اُواےدا کازُواو نے جاپان کے وزیراعظم کیشیدا فومیو سے زرمبادلہ کی شرح پر تبادلہ خیال کیا ہے۔ یہ ملاقات ایک ایسے وقت ہوئی ہے جب ڈالر کے مقابلے میں ین کی قدر میں ریکارڈ کمی جاری ہے۔

دونوں اعلیٰ عہدیداروں نے منگل کو ٹوکیو میں وزیراعظم کے دفتر میں بات چیت کی ہے۔

جناب اُواےدا نے بعد ازاں نامہ نگاروں کو بتایا کہ ملاقات میں شرح تبادلہ میں کمی پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔

جاپان کے مرکزی بینک کے گورنر نے کہا کہ عام طور پر غیر ملکی زر مبادلہ کی شرح سے معیشت اور قیمتوں پر بڑا اثر پڑنے کا امکان پایا جاتا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ بینک آف جاپان پالیسی کو کنٹرول کرتے ہوئے ین کی قدر میں حالیہ کمی پر گہری نگاہ رکھے گا۔

جاپانی کرنسی کی قدر 29 اپریل کو ڈالر کے مقابلے میں 160 ین کی حد تک گر گئی تھی۔ 34 سالوں میں یہ پہلا موقع تھا کہ جاپانی ین کا تبادلہ اس سطح پر کیا گیا۔

اس کے بعد ڈالر کے مقابلے میں ین کی قدر تیزی سے مضبوط ہوتے ہوئے 154 ین کی سطح پر آ گئی تھی۔ گزشتہ جمعرات کو کرنسی کی قدر میں دوبارہ اضافہ ہوا ہے۔ ین کی قدر میں تبدیلی سے ان قیاس آرائیوں نے زور پکڑا ہے کہ جاپانی حکام نے زرمبادلہ کی مارکیٹ میں بار بار مداخلت کی ہے۔