پوٹن کا ٹیکٹیکل جوہری ہتھیاروں کی مشق کا حکم

روسی وزارت دفاع کے حکام نے پیر کے روز کہا ہے کہ صدر ولادیمیر پوٹن نے ٹیکٹیکل جوہری ہتھیاروں کے استعمال کے مفروضے کی بنیاد پر مشق کی تیاریوں کا حکم جاری کیا ہے۔ حکام کے مطابق، اس مشق کا مقصد جنگی یونٹوں اور غیر اسٹریٹجک جوہری ہتھیاروں کی تیاری کو برقرار رکھنا ہے۔

وزارت کے حکام نے بتایا ہے کہ سدرن ملٹری ڈسٹرکٹ کی افواج ان مشقوں میں حصہ لیں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ مشق "بعض مغربی عہدیداروں کے اشتعال انگیز بیانات اور دھمکیوں کے جواب میں کی جا رہی ہے"۔ حکام نے کہا ہے کہ وہ روس کی علاقائی سالمیت اور خودمختاری کو یقینی بنانا چاہتے ہیں۔

کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نے کہا کہ کچھ مغربی رہنماؤں نے یوکرین میں "مسلح دستے روانہ کرنے کے ارادے" کے بارے میں گفتگو کی ہے۔ انہوں نے کہا، "کشیدگی میں اضافے کا یہ بالکل نیا مرحلہ ہے"۔

یوکرین کے ملٹری انٹیلی جنس یونٹ کے ترجمان آندری یوسوف نے روس کے منصوبوں کی مذمت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ "جوہری بلیک میلنگ" کرنا پوٹن کی حکومت کا مستقل وطیرہ رہا ہے۔