اسرائیل میں الجزیرہ کے دفاتر بند کرنے کا فیصلہ

اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت نے سیٹلائٹ ٹی وی نیٹ ورک الجزیرہ کے مقامی آپریشنز بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

نیتن یاہو نے اتوار کو سوشل میڈیا پر قطر میں قائم اس ادارے کو مشتعل کرنے والا چینل قرار دیتے ہوئے یہ اعلان کیا۔

الجزیرہ نے بعد ازاں ایک بیان جاری کیا جس میں اسرائیلی فیصلے کی مذمت کی گئی ہے۔ اس میں کہا گیا ہے، "اسرائیل کی جانب سے غزہ کی پٹی میں اپنے اقدامات کو چھپانے کی کوشش کے طور پر دیکھا جانے والا آزاد صحافت پر جاری دباؤ، بین الاقوامی اور انسانی قانون کے منافی ہے"۔

نشریاتی ادارے نے یہ بھی کہا، "اسرائیل کی جانب سے صحافیوں کو براہ راست نشانہ بنانا، قتل کرنا، گرفتاریاں اور دھمکیاں الجزیرہ کو رپورٹنگ کے اپنے عزم سے نہیں روکیں گی"۔

اتوار کی سہ پہر NHK کے یروشلم بیورو میں الجزیرہ کی نشریات دکھانے والی ایک ٹی وی اسکرین پر نشریات بند ہو گئیں۔ اس کے بجائے اسکرین پر یہ عبرانی الفاظ دکھائی دے رہے تھے، "حکومتی فیصلے کے مطابق اسرائیل میں الجزیرہ ٹی وی اسٹیشن کی نشریات بند کر دی گئی ہیں"۔