وزیرِ اعظم کِشیدا کا فرانس و جنوبی امریکی ممالک کے دوروں پر اظہارِ خیال

جاپان کے وزیرِ اعظم کِشیدا فُومیو کا فرانس، برازیل اور پیراگوئے کا چھ روزہ دورہ مکمل ہونے والا ہے۔
وزیرِ اعظم کشیدا نے اپنے اس دورے میں حاصل کردہ کامیابیوں کی تفصیلات پر روشنی ڈالی۔

جناب کِشیدا نے ساؤ پالو میں ایک نیوز کانفرنس منعقد کی۔

وزیرِ اعظم کِشیدا نے کہا: "قانون کی حکمرانی پر مبنی آزاد اور کھلے بین الاقوامی نظام کو برقرار رکھنے اور تعاون کے دائرے کو وسعت دینے کے لیے اپنے عزم کا پختہ مظاہرہ کرنا ضروری ہے۔ میں نے ان مسائل اور حالات کو مدنظر رکھا جن کا ہر ملک کو سامنا ہے۔ ایسے تفصیلی اقدامات کا ذکر کیا جو جاپان کے لیے منفرد ہیں، اور اس دورے کے دوران ان نکات کو ذہن میں رکھا"۔

وزیرِ اعظم نے پہلے اپنے دورۂ پیرس کا ذکر کیا۔ وہاں انہوں نے اقتصادی تعاون اور ترقی کی تنظیم کی وزارتی کونسل سے خطاب کیا تھا۔

انہوں نے مصنوعی ذہانت کے استعمال کے اصولوں اور سفارشات کی حمایت کرنے والے بیان پر بھی اتفاق کیا۔

جناب کِشیدا نے فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون سے بھی ملاقات کی۔

فرانس کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کے بارے میں، جناب کِشیدا نے کہا کہ وہ اور میکرون دونوں ممالک کے درمیان سلامتی تعلقات کو مضبوط بنانے کے لیے بنیاد رکھنے میں کامیاب رہے۔

اس کے بعد وزیرِ اعظم کِشیدا نے جاپان اور "گلوبل ساؤتھ" کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانے کے لیے بطور وزیر اعظم، جنوبی امریکہ کے اپنے پہلے دورے کے بارے میں بات کی۔ برازیل کے صدر لوئیز اناسیو لولا دا سلوا کے ساتھ ملاقات میں، رہنماؤں نے موسمیاتی تبدیلی کے اثرات کو کم کرنے کے لیے ماحول دوست شراکتداری اقدام پر اتفاق کیا۔

پیراگوئے میں انہوں نے صدر سانتیاگو پینا سے ملاقات کی۔ ان رہنماؤں نے دونوں ممالک کے درمیان تعاون اور تبادلوں کے دائرہ کار کو مزید وسعت دینے پر اتفاق کیا۔

وزیرِ اعظم کِشیدا نے تنوع پاتی بین الاقوامی برادری میں پورے وسطی اور جنوبی امریکی خطے کے ساتھ تعلقات کو مضبوط بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔