کِشیدا اور لُولا، موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کی کوششوں میں تعاون پر متفق

جاپان کے وزیراعظم کِشیدا فُومیو نے برازیل کے صدر لوئیز اناسیو لُولا ڈا سِلوا سے ملاقات کی ہے جس میں زیادہ تر توجہ موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے پر مرکوز کی گئی۔

دونوں رہنماؤں نے جمعے کو برازیلیا میں ملاقات کی۔ کشیدا نے برازیل کے ساتھ تعلقات کی اہمیت پر زور دیا۔

اس جنوبی امریکی ملک میں جاپانی تارکین وطن اور انکی نسلوں کی دنیا کی سب سے بڑی کمیونٹی ہے۔

کشیدا نے کہا، "میں صدر لولا کے ساتھ ان سربراہی مذاکرات کو دو طرفہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کے ایک موقع کے طور پر استعمال کروں گا۔ میں نے اپنے عہد کی تجدید کی ہے"۔

برازیل اگلے سال اقوام متحدہ کی موسمیاتی کانفرنس COP30 کی میزبانی کرنے والا ہے۔

کشیدا اور لولا نے ایمیزون کو بچانے میں مدد کے منصوبے پر اتفاق کیا، جس میں جنگلات کی کٹائی کو روکنے اور تباہ شدہ زمین کو بحال کرنے کے اقدامات شامل ہیں۔

انہوں نے ایک نئے دو طرفہ فریم ورک پر بھی اتفاق کیا جس کا مقصد دنیا کو ڈی کاربنائز کرنے میں مدد کرنا ہے۔ جاپان برازیل کے بائیو ایندھن اور وافر قدرتی وسائل کو استعمال کرے گا۔ جبکہ برازیل ہائبرڈ انجن سمیت جاپان کی جدید ٹیکنالوجیز سے استفادہ کرے گا۔

بات چیت میں ایک موقع پر، کشیدا اور لولا نے قانون کی حکمرانی پر مبنی آزاد اور کھلے بین الاقوامی نظام کو برقرار رکھنے کا عہد کیا۔