OECD وزراء کا اقتصادی جبر پر انتباہ

اقتصادی تعاون اور ترقی کی تنظیم کے وزراء نے پیرس میں دو روزہ اجلاس کو ایک بیان کے ساتھ سمیٹ لیا ہے جس میں اقتصادی جبر کے بارے میں "سنگین خدشات" کا اظہار کیا گیا ہے۔

اس 38 رکنی گروپ کی وزارتی کونسل کی صدارت اس سال جاپان نے کی۔ یہ مذاکرات جمعہ کو ختم ہو گئے۔

وزراء نے یوکرین پر روس کے حملے کی "سخت ترین الفاظ میں" مذمت کی۔

انہوں نے مشرق وسطیٰ میں تنازعات کے منفی اثرات کے بارے میں بھی "گہری تشویش" کا اظہار کیا۔

وزراء نے اقتصادی استحکام اور سلامتی کو تقویت دینے کے عزم کی بھی توثیق کی۔

اقتصادی جبر سے مراد تجارتی شراکت داروں پر پابندیوں یا محصولات کے ذریعے دباؤ ڈالنا ہے۔

بظاہر چین کو ذہن میں رکھتے ہوئے، وزراء نے اس بات کو یقینی بنانے کا عزم کیا کہ "معاشی انحصار کو ہتھیار بنانے کی کوششیں ناکام ہو جائیں گی"۔

جاپان کی وزیر خارجہ کامیکاوا یوکو نے کہا کہ جاپان نے عالمی برادری میں تقسیم گہری ہونے کے باوجود مذاکرات کو نتیجہ خیز بنانے میں اپنا کردار ادا کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس اجلاس نے اقتصادی سلامتی کے شعبے میں خیالات کے تبادلے کی بنیاد رکھی ہے۔