جاپان، امریکا، آسٹریلیا اور فلپائن کے دفاعی سربراہان کی انسدادِ چین ملاقات

جاپان، امریکہ، آسٹریلیا اور فلپائن کے دفاعی سربراہوں نے چین کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تعاون میں اضافے پر اتفاق کیا ہے۔

ان کی ملاقات جمعرات کو ہوائی میں ہوئی۔ جاپان کے کیہارا مِینورو، امریکہ کے لائیڈ آسٹن، آسٹریلیا کے رچرڈ مارلس اور فلپائن کے گلبرٹو ٹیوڈورو نے بعد میں ایک مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کیا۔

دفاعی سربراہان نے بین الاقوامی پانیوں میں فلپائنی بحری جہازوں کی آمد و رفت کی آزادی میں چین کی طرف سے بار بار رکاوٹوں کا حوالہ دیتے ہوئے بحیرہ مشرقی چین اور بحیرہ جنوبی چین میں پیشرفت پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔

انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ چاروں ممالک گزشتہ ماہ اس طرح کے پہلے اجلاس کے بعد مزید مشترکہ تربیت کا انعقاد کر کے ایک آزاد اور کھلے ہند بحرالکاہل کے حصول کے لیے تعاون کو مضبوط کریں گے۔

اس سے قبل جاپان، امریکا اور آسٹریلیا کے دفاعی سربراہان نے سہ فریقی مذاکرات کیے جن میں انہوں نے F-35 لڑاکا طیاروں کی مشترکہ تربیت پر اتفاق کیا۔ انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ امریکہ اور آسٹریلیا جاپان کے ساتھ مل کر کام کریں گے کیونکہ یہ جوابی حملے کی صلاحیتوں کو متعارف کروا رہا ہے۔

کیہارا نے مشترکہ نیوز کانفرنس میں کہا کہ ہند بحرالکاہل خطے میں امن و سلامتی کو برقرار رکھنے کے لیے اتحادیوں اور ہم خیال ممالک کے لیے اپنے تعاون اور ہم آہنگی کا مظاہرہ کرنا انتہائی ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ جاپان امریکہ، آسٹریلیا اور فلپائن کے ساتھ تعاون کو مزید گہرا کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔