بائیو انجینئرڈ پیوندکاری میں ممکنہ کلیدی قدم

جاپان کے محققین کا کہنا ہے کہ انہوں نے چوہوں میں ٹرانسپلانٹ کیے گئے بائیو انجینیئرڈ پھیپھڑوں میں خون کے بہاؤ کی تصدیق کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ پھیپھڑوں کو انسانی خلیات کا استعمال کرتے ہوئے بنایا گیا تھا۔

توہوکُو یونیورسٹی کے انسٹی ٹیوٹ آف ڈویلپمنٹ، ایجنگ اینڈ کینسر کے اسسٹنٹ پروفیسر سوزوکی تاکایا اور دیگر محققین کا کہنا ہے کہ انہوں نے چوہے کے پھیپھڑوں سے تمام خلیات نکال دیے۔ تاہم، کولاگین ریشوں اور اندرونی جھلی کو برقرار رکھا گیا تھا۔

اس گروپ کا کہنا ہے کہ اس کے بعد انہوں نے پھیپھڑے بنانے کے لیے، خون کی شریانوں سمیت انسانی خلیات کو ان میں انجکشن کے ذریعے داخل کیا اور بائیو انجینیئرڈ اعضاء کی دوسرے چوہوں میں پیوندکاری کی۔

محققین کا کہنا ہے کہ پھیپھڑوں جیسے پیچیدہ اعضاء کی انجینئرنگ ایک بڑا چیلنج بنی ہوئی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ اس تحقیق میں چوہوں کی سطح پر تیار کیے گئے پھیپھڑوں کے بائیو انجینیئرنگ پلیٹ فارم سے مستقبل میں بڑے پیمانے پر انسانی اعضاء کی بائیو انجینیئرنگ کی سہولت مل سکتی ہے۔