جاپان کی مرکزی حزبِ اختلاف جماعت 3 ضمنی انتخابات میں کامیاب

جاپان میں اتوار کے روز ایوانِ زیریں کی تین نشستوں پر ضمنی انتخابات ہوئے۔ مرکزی حزب اختلاف، کونسٹیٹیوشنل ڈیموکریٹک پارٹی، سی ڈی پی کے امیدواروں نے تینوں نشستوں پر کامیابی حاصل کر لی ہے۔ توقع ہے کہ وزیرِ اعظم کِشیدا فُومیو کی زیر قیادت حکومتی انتظامیہ ان نتائج سے متاثر ہو گی۔

ضمنی انتخابات ٹوکیو کے علاوہ شِیمانے اور ناگاساکی پریفیکچروں کے حلقوں میں ہوئے ہیں۔

شِیمانے پریفیکچر کے حلقہ نمبر ایک میں حزبِ مخالف، سی ڈی پی کے امیدوار نے برسرِ اقتدار لبرل ڈیموکریٹک پارٹی، ایل ڈی پی کو شکست دی۔

ایک سابق وزیر مملکت برائے انصاف، جو ووٹ خریدنے کے الزامات پر مستعفی ہو گئے تھے، ان کی خالی نشست پر ٹوکیو کے حلقہ نمبر 15 میں انتخاب ہوا۔ سی ڈی پی کے امیدوار نے انتخاب جیت لیا، ایل ڈی پی نے اس نشست کے لیے امیدوار کھڑا نہیں کیا تھا۔

ایل ڈی پی نے ناگاساکی پریفیکچر کےحلقہ نمبر 3 سے بھی مقابلہ نہیں کیا۔ وہاں ضمنی انتخاب اس لیے منعقد ہوا کیونکہ ایک قانون ساز سیاسی فنڈ ریزنگ اسکینڈل کے باعث مستعفی ہو گئے تھے۔

اس ماہ کے شروع میں، LDP نے ایسے درجنوں اراکین کو سزا دی جنہوں نے فنڈریزر ٹکٹوں کی فروخت سے سرمایہ حاصل کیا لیکن آمدنی کے گوشواروں میں اسکی مالیت کا درست طور پر اندراج نہیں کیا تھا۔