صحافی پر نوالنی کی ٹیم کو یوٹیوب چینل چلانے میں مدد دینے کا الزام

ایک روسی عدالت نے ایک صحافی کو حراست میں لے کر اس پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے یوٹیوب چینل بنانے میں مدد کی جو حزبِ اختلاف کے آنجہانی رہنما الیکسی نوالنی کی حمایت کرنے والی ایک ٹیم کے ذریعے چلایا گیا۔

نوالنی کی موت فروری میں ایک پینل کالونی میں ہوئی تھی۔

ماسکو میں عدالت نے ہفتے کے روز سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ میں کہا کہ کونسٹنٹِین گابوف نے یوٹیوب چینل کے لیے تصاویر اور ویڈیوز جیسے مواد کی تیاری میں مدد فراہم کی۔

نوالنی کی ٹیم کو روس میں ایک انتہا پسند گروپ قرار دیا گیا ہے اور اس کی سرگرمیوں پر پابندی ہے۔ گروپ بنیادی طور پر ملک سے باہر کام کرتا ہے۔

روسی عدالت نے گابوف کی قومیت ظاہر نہیں کی لیکن اس کا کہنا ہے کہ وہ خبر رساں ادارے رائٹرز کے لیے کام کرتا ہے۔

روسی اور مغربی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ اس نے روسی اور جرمن ذرائع ابلاغ کے ساتھ ساتھ رائٹرز کے لیے بھی کام کیا ہے۔