اسمارٹ فون کاروبار کی بڑی کمپنیوں پر ضوابط کا بل منظور

جاپان کی کابینہ نے اسمارٹ فون کے کاروبار میں منصفانہ مسابقت کو یقینی بنانے کے لیے ایک بل کی منظوری دی ہے جس کا مقصد بڑی ٹیکنالوجی کمپنیوں کو حکومتی ضوابط کے دائرہ کار میں لانا ہے۔

ایپل اور گوگل سمیت سرکردہ ٹیک کمپنیوں کی اسمارٹ فون کے میدان میں اجارہ داری ہے۔ یہ امر باعث تشویش ہے کہ منڈی میں اِن کا غلبہ نئی کمپنیوں کا راستہ روک سکتا ہے اور اِن کی خدمات استعمال کرنے والے کاروباری اداروں کے اخراجات بھی بڑھ سکتے ہیں۔

جمعہ کے روز منظور کیا جانے والا بل چار شعبوں میں ایسی کمپنیاں نامزد کرے گا جنہیں پر ضوابط کا اطلاق مقصود ہے۔ یہ چار شعبے آپریٹنگ سافٹ ویئر، ایپ اسٹورز، انٹرنیٹ براؤزرز، اور سرچ انجن کے ہیں۔

مجوزہ قانون ایسی کاروباری سرگرمیوں کی وضاحت کرے گا جو مسابقت کی راہ میں رکاوٹ بنتی ہیں اور جن پر پابندیاں لگانے کی ضرورت ہے۔

نامزد کی جانے والی کمپنیوں کو، حریف اداروں کے ایپ اسٹورز اور ادائیگی خدمات کے استعمال میں رکاوٹ ڈالنے سے روک دیا جائے گا۔

کاروباری شراکت داروں کے ساتھ امتیازی لین دین کرنے پر بھی پابندی ہو گی۔

کمپنیوں کے لیے ضوابط کی تعمیل کے بارے میں سالانہ رپورٹ پیش کرنا لازم ہو گا۔

خلاف ورزی کرنے والوں کو جاپان میں ان کی فروخت کے 20 فیصد کے برابر جرمانے کا سامنا کرنا پڑے گا۔ دوبارہ خلاف ورزی کی صورت میں جرمانہ بڑھا کر 30 فیصد کر دیا جائے گا۔