مغرب کے فراہم کردہ ہتھیاروں پر حملے بڑھائے جائیں گے: روسی وزیر دفاع

روس کے وزیر دفاع سرگئی شوئیگو نے کہا ہے کہ ان کی افواج یوکرین میں لاجسٹک مراکز اور امریکہ اور یورپ سے فراہم کردہ ہتھیار ذخیرہ کرنے کے اڈوں پر مزید حملے کریں گی۔

منگل کو ایک اجلاس میں جناب شوئیگو نے کہا، "کیف حکومت نیٹو کے ہدایت کاروں کی طرف سے تیار کردہ جوابی کارروائی میں اپنے مقاصد کے حصول میں ناکام رہی ہے۔ ہمارے فوجی اہلکاروں نے مغربی ہتھیاروں کی برتری کا پردہ چاک کر دیا ہے"۔

جناب شوئیگو نے مزید کہا کہ محاذ جنگ پر موجود روسی فوجی پہلے ہی کارروائی کا آغاز کر چکے ہیں۔ وہ ان فوجیوں کو مزید تقویت دیں گے اور مزید ہتھیار اور ساز و سامان مہیا کریں گے۔

یوکرینی رہنماؤں کو اپنے دوسرے سب سے بڑے شہر خارکیف پر مسلسل حملوں کا سامنا رہا ہے۔ صدر ولودیمیر زیلنسکی نے کہا ہے کہ ٹیلی ویژن ٹاور پر حملہ اس علاقے کو ناقابل رہائش بنانے کی کوششوں کا حصہ ہے۔

امریکی تھنک ٹینک دی انسٹی ٹیوٹ فار دی سٹڈی آف وار کے تجزیہ کاروں نے کہا ہے کہ روسی افواج مقامی باشندوں کو علاقہ چھوڑنے پر راضی کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ روسی فوجی ممکنہ حملے سے پہلے شہر کو "تباہ" کرنا چاہتے ہیں۔