امریکی ایوانِ نمائندگان میں یوکرین امدادی بل منظور

امریکی ایوانِ نمائندگان نے یوکرین کو اضافی فوجی امداد کی فراہمی کا بل منظور کر لیا ہے۔

یہ امدادی پیکج ہفتے کے روز دو جماعتی حمایت کے ساتھ منظور کیا گیا۔ اس کی حمایت میں 311 اور مخالفت میں 112 ووٹ ڈالے گئے۔

ایوان میں ریپبلکنز کو اکثریت حاصل ہے۔ ان میں سے تقریباً نصف نے اس کے خلاف ووٹ دیا، جن کی قیادت اُن سخت گیروں نے کی، جو کہ امداد فراہم کرنے سے ہچکچا رہے ہیں۔ بیشتر ڈیموکریٹس نے اس کی حمایت کی ہے۔

یوکرین کی امداد کی مالیت تقریباً 60.8 ارب ڈالر ہے، جس کا کچھ حصہ واپس ادا کرنے کی ضرورت ہے۔

امریکہ یوکرین کو روسی حملے کے خلاف اس کی جدوجہد کے لیے سب سے زیادہ فوجی امداد فراہم کرتا آیا ہے۔

دونوں جماعتوں کے اختلاف کے باعث یوکرین کو دی جانے والی اضافی امداد رکی ہوئی تھی۔ فوجی امداد گزشتہ سال کے آخر میں ختم ہو گئی تھی اور اس میں توسیع کے لیے اب تک کوئی بجٹ مسودہ منظور نہیں کیا گیا تھا۔

یہ مسودۂ قانون اب سینیٹ میں جائے گا اور صدر جو بائیڈن کو اس پر دستخط کر کے اس کو قانون کی شکل دینا ہو گی۔

صدر بائیڈن نے ایک بیان کے ساتھ بل کی منظوری کا خیرمقدم کیا جس میں کہا گیا ہے کہ اس سے "عالمی سطح پر امریکی قیادت کی طاقت کے بارے میں ایک واضح پیغام جاتا ہے۔"

انہوں نے سینیٹ پر زور دیا کہ پیکج کی فوری منظوری دی جائے۔